عمران خان نے مذاکرات کی کوئی دعوت نہیں دی

لاہور:مسلم لیگ (ن)کے رہنماو وفاقی وزیر داخلہ راناثنااللہ نے کہا ہے کہ عمران خان نے مذاکرات کی کوئی دعوت نہیں دی، غیر مشروط مذاکرات کے لئے پی ڈی ایم کی لیڈر شپ تیار ہے، عمران اسمبلیوں کو توڑنے کی بات کر رہے ہیں تو توڑ دیں، ہم الیکشن کے لیے تیار ہیں، پارٹی نے محمد نواز شریف کو درخواست کی ہے کہ الیکشن مہم کی قیادت کریں، الیکشن بھرپور طریقے سے لڑیں گے، آئندہ انتخابات میں پنجاب میں اس بار اکثریت حاصل کر کے حکومت بنائیں گے۔ہفتہ کے روز لاہور میں انسداد منشیات عدالت میں پیشی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی والے سیاست بچانے کے لیے ملک کو نقصان پہنچانے پر تلے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹیریان عمران خان کی بچی ہے جس کے شواہد موجود ہیں، ڈیلی میل نے وزیراعظم محمد شہباز شریف سے معافی مانگی، سیاسی انتقام کے لیے بنائے گئے کیسز ختم ہونے چاہیں۔ انہوں نے کہا کہ شہباز گل کے خلاف کوئی سیاسی کیس نہیں ہے، شہباز گل نے نفرت اور اشتعال انگیزی پھیلانے کی کوشش کی جس کی وجہ سے ان پر مقدمہ درج ہوا، اعظم سواتی کے خلاف بھی مقدمہ سیاسی نہیں ہے، اعظم سواتی نے بھی فوج اور عدلیہ کو نشانہ بنایا۔وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ پی ٹی آئی رہنماوں کے خلاف سیاسی مقدمات ہوتے تو انہیں 4،4 دن بعد ضمانتیں نہ ملتیں بلکہ یہ ہماری طرح تین تین سال قید بھگتتے۔ ایک سوال پر رانا ثنااللہ نے کہا کہ صدر مملکت عارف علوی مذاکرات کی کوشش کر رہے ہیں، ہم ملکی معیشت بچانے اور ملک کو دیوالیہ ہونے سے بچانے کی کوشش کر رہے ہیں، پی ٹی آئی والے ملک کے دیوالیہ ہونے کا جھوٹا پروپیگنڈا کر رہے ہیں۔ ایک سوال پر وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ فوج منظم ادارہ ہے وہاں کسی بندے کی پالیسی نہیں چلتی بلکہ پالیسی ادارے کی ہوتی ہے۔رانا ثنا اللہ نے کہا کہ ہمارے خلاف انتقامی کارروائیاں کی گئیں، اگر کیس ختم ہو رہے ہیں تو ہمارے ساتھ انصاف ہو رہا ہے، توشہ خانہ کیس میں اس کی رسیدیں بھی جعلی ثابت ہوئی ہیں، مرشد حکم دے رہی تھیں کہ گھڑیاں بیچ دو، اس سے بڑا ثبوت کیا ہو سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ جب یہ ہماری لیڈر شپ پر جھوٹے مقدمے بنا رہا تھا اس وقت خود اس قسم کی کرپشن میں ملوث تھا، یہ پچھلے 7 ماہ سے حکومت کو بلیک میل کر رہے ہیں، یہ شخص اپنی ذاتی انا کے لئے ملک کو نقصان پہنچانے پر تلا ہوا ہے، اگر اقتدار ان کے پاس ہو تو سب ٹھیک اور اگر اقتدار نہ ہو تو سب غلط ، تاریخیں دینے والے ڈرامے کو چھوڑو اسمبلی توڑو ہم تیار ہیں،ہم 3 سال جھوٹے مقدمات میں جیلوں میں رہے، یہ کتنی بے شرمی سے یہ بات کر رہے ہیں کہ ہم اپنے مقدمات ختم کروا رہے ہیں، یہ ہمارے خلاف جھوٹے مقدمات ہیں اور یہ ختم ہونے چاہیں۔انہوں نے کہا کہ محمد نوازشریف سے پارٹی نے درخواست کی ہے کہ آئندہ انتخابی مہم میں پاکستان میں موجود ہوں جبکہ اس درخواست کوانہوں نے قبول کر لیا ہے، جیسے ہی ضرورت ہو گی محمد نوازشریف پارٹی کی قیادت کریں گے۔ رانا ثنااللہ نے کہا کہ عمران خان مجھے مذاکرات کی دعوت کبھی نہیں دیں گے اور نہ میرے ساتھ مذاکرات ہو سکتے ہیں، عمران خان نے مذاکرات کی کوئی دعوت نہیں دی، غیر مشروط مذاکرات کے لئے پی ڈی ایم کی لیڈر شپ تیار ہے، صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی درمیان میں ایک کردار ادا کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ ہم ملک کو ڈیفالٹ سے بچانے کی کوشش کر رہے ہیں اور وہ کوشش کر رہے ہیں کہ معیشت بیٹھ جائے، وہ پورا زور لگا رہے ہیں کہ ملک ڈیفالٹ کر جائے، پچھلے 20 دن سے پروپیگنڈہ کر رہے ہیں کہ ملک ڈیفالٹ کر رہا ہے، سب سے پہلے بات اکانومی پر ہونی چاہیے، لوگوں کو ریلیف ملنا چاہیے، ہم الیکشن بھرپور طریقے سے لڑیں گے، ہم جب عوام میں جائیں گے تو ہر چیز عوام کے سامنے رکھیں گے۔انہوں کہا کہ آئندہ انتخابات میں ہم پنجاب میں اکثریت حاصل کر کے حکومت بنائیں گے۔

شیئر کریں