ایجوکیشن کارڈ خیبر پختو نخوا حکومت کا منفرد اور تعلیم دوست منصوبہ

پشاور : وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت نے شعبہ تعلیم کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے اور طلباو طالبات کی تعلیم تک یکساں رسائی یقینی بنانے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے ہیں جن کے بہترین نتائج سامنے آرہے ہیں۔ رواں تعلیمی سال کیلئے ایجوکیشن کارڈ کا اجراءبھی انہیں کاوشوں کا تسلسل ہے جس کے تحت سرکاری کالجز کے طلبہ کے فیس معاف کی جارہی ہے۔اس مقصد کیلئے ایک ارب روپے کی خطیر رقم مختص کی گئی ہے جس سے 2 لاکھ 44 ہزار سے زائد طلبہ مستفید ہوں گے۔ وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ سے جاری ایک بیان میں وزیراعلیٰ نے کہا کہ ایجوکیشن کارڈ صوبائی حکومت کا ایک منفرد اور تعلیم دوست منصوبہ ہے جو صو بے میں اعلیٰ تعلیم کے فروغ میں حوصلہ افزااقدام ثابت ہوگا۔انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے محدود مالی وسائل کے باوجود معیاری اور یکساں تعلیم کی فراہمی کے وژن پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا۔تعلیم کا شعبہ شروع دن سے ہی پی ٹی آئی حکومت کی اولین ترجیح رہا ہے۔ہم نے حکومت میں آتے ہی تعلیمی ایمرجنسی نافذ کر کے سرکاری تعلیمی اداروں کا معیار بلند کرنے اور طلبہ کو سہولیات کی فراہمی کے لیے وسیع پیمانے پر اصلاحات و اقدامات کا سلسلہ شروع کیا جس کی وجہ سے سرکاری تعلیمی اداروں پر عوام کا اعتماد بحال ہو رہا ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ صوبے میں موجودہ تعلیمی اداروں کا معیار بلند کرنے کےساتھ ساتھ متعدد نئے اعلیٰ تعلیمی ادارے قائم کئے گئے۔گزشتہ چار سالوں کے دوران 76 کالجز کی اپگریڈیشن ، 37 نئے کالجز کا قیام ، پاک آسٹریا فخہ شولے انسٹیٹیوٹ سمیت مختلف اضلاع میں یونیورسٹی کیمپس اور نئی یونیورسٹیوں کا قیام صوبائی حکومت کے ایسے اقدامات ہےں جو معیاری تعلیم و تحقیق کے فروغ میں سنگ میل ثابت ہونگے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ رواں مالی سال بجٹ میں بھی شعبہ اعلیٰ تعلیم کےلئے خطیر رقم مختص کی گئی ہے۔رواں سال اے ڈی پی کے تحت شعبہ اعلیٰ تعلیم کے ترقیاتی منصوبوں پر 8 ارب روپے سے زائد رقم خرچ کی جائے گی جس میں کالجز کی مرمت و بحالی ، نئے کالجز کے قیام ، جامعات کے استحکام ، کامرس اینڈ مینجمنٹ سائنسزکے فروغ ، پبلک لائبریریز کی بہتری ، سکالرشپس اور وظائف کی ادائیگی ، نئی یونیورسٹیز کے قیام اور محکمہ اعلیٰ تعلیم کی بہتری کے لئے متعدد ترقیاتی منصوبے شامل کئے گئے ہیں جن کی تکمیل سے شعبہ اعلیٰ تعلیم کو جدید خطوط پر استوار کرنے میں مدد ملے گی۔محمود خان نے کہا کہ ہمارا حتمی مقصد شعبہ اعلیٰ تعلیم کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنا اور مختلف شعبوں میں اعلیٰ صلاحیتوں کے حامل ماہرین پیدا کرنا ہے ۔ ہماری کوشش ہے کہ اپنی نسلوں کو جدید دنیا کا مقابلہ کرنے کےلئے تیار کیا جائے ۔ وزیراعلیٰ نے واضح کیا کہ اس مقصد کے لئے محکمہ اعلیٰ تعلیم سمیت تمام اسٹیک ہولڈرز کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔

شیئر کریں