فواد چودھری کے شرمناک اور توہین آمیز بیان کیخلاف پختون سراپا احتجاج

فواد چودھری کے نسل پرستانہ بیان پرسوشل میڈیا پران سے معافی اور نجی چینل کے بائیکاٹ کا مطالبہ کیاجارہا ہے۔سابق ڈی جی آئی ایف آئی بشیرمیمن نے ہیکرہونے کے دعویدارشخص کے اس انکشاف کی تصدیق کی تھی کہ انہیں وزیراعظم ہاوس کے باتھ روم میں بند کیا گیا تھا۔انہوں نے نجی چینل کو انٹرویو میں بتایا تھا کہ عمران خان نے وزیراعظم ہاوس میں ان کے سامنے مریم نواز کے بارے میں انتہائی غلیظ زبان استعمال کی تھی جس پرنہوں نے اونچی آواز میں عمران خان کو جواب دیا۔ بشیر میمن کے مطابق،میرا لہجہ دیکھتے ہوئے اعظم خان نے دیکھا کہ معاملہ خراب ہو رہا ہے تو وہ میرا ہاتھ پکڑکر باتھ روم میں لے گئے اور کہا خدا کا واسطہ ہے سر، وزیر اعظم سے اس طرح بات کرتے ہیں۔وائرل کلپ میں کاشف عباسی نے معاملے پراعظم خان کا موقف جاننے کے لیے پی ٹی آئی ترجمان فواد چودھری سے سوال کیا جس کا جواب دینے کے بجائے کہا کہ،نہیں وہ تو کہتے ہیں لیکن انہوں (بشیرمیمن)نے بھی تو یہ کہا ہے کہ یہ(اعظم خان )مجھے سمجھانے کے لیے باتھ روم میں لے گئے تھے.ساتھ ہی فواد چودھری نے پنجابی زبان میں معنی خیزلہجے میں کہا کہ،بڑا انہوں ( بشیرمیمن )نے رسک لیا ہے پٹھان کے ساتھ باتھ روم میں جانے کا ۔اس موقع پرکاشف عباسی نے ردعمل میں ہنستے ہوئے کہا ،بریک لیتے ہیں ناظرین،بات کہیں اورجارہی ہے۔

شیئر کریں