یادگاری ڈاک ٹکٹ کا اجرا ء ، پاکستان پوسٹ نے ملک کی آزادی ، خودمختاری اور ترقی میں ہمیشہ اپنا کردار اداکیا، مولانااسد محمود

اسلام آباد:وفاقی وزیر مواصلات و پوسٹل سروسز مولانااسد محمود نے کہاہے کہ پاکستان کی آزادی کے 75 سال کی تکمیل پر محکمہ ڈاک کی طرف سے یادگاری ڈاک ٹکٹ کے اجرا کی تقریب میں شرکت باعث اعزاز ہے، پاکستان پوسٹ نے ملک کی آزادی ، خودمختاری اور ترقی میں ہمیشہ اپنا کردار اداکیا، آج کا دن اس تجدید عہد کادن ہے ، ہم اپنی روایات کو برقرار رکھتے ہوئے صارفین کی خدمت میں کردار اداکرتے رہیں گے،پاکستان پوسٹ کو جدیدٹیکنالوجی سے ہم آہنگ ہوکر ملک وقوم کی ترقی میں کلیدی کردار اداکرناہے، سروسز کی بہتری کے عزم کےساتھ ادارہ کو منافع بخش بنائیں گے۔ان خیالات کااظہارانہوں نے جمعہ کو ڈائمنڈ جوبلی کی تقریبات کے سلسلہ میں یادگاری ڈاک ٹکٹ کے اجراکی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ یہ تقریب پوسٹل سٹاف کالج اسلام آباد میں منعقدہوئی۔وفاقی وزیرنے کہا کہ ڈائمنڈ جوبلی کے موقع پر پوری قوم کو مبارک باد پیش کرتے ہیں اور اس عزم کا اظہار کرتے ہیں کہ محکمہ ڈاک ملک کی معاشی اقتصادی ترقی میں اپنا نمایاں کردار اداکرتا رہے گا۔ پاکستان پوسٹ کی طرف سے یادگاری ڈاک ٹکٹ کااجرا کیاجارہاہے جو ایک خوش آئند اقدام ہے۔ اس پر محکمہ ڈاک اور وزارت مواصلات کو مبارکباد پیش کرتاہوں۔پاکستان پوسٹ نے ملکی ترقی میں کردار ادا کیا ہے اورآج ہم اس عہد کی تجدید کررہےہیں کہ ہم سب کسی نہ کسی حیثیت میں اپنے وطن کے لئے خدمات سرانجام دیتے رہیں گے۔ انہوں نے کہاکہ اس تقریب میں شرکت باعث سعادت ہے اور اللہ رب العزت نے ہمیں موقع دیا ہے کہ ہم ملک و ملت کے لئے خدمات پیش کرسکیں گے۔اداروں کی سطح پر ہماری ذمہ داریاں تقسیم ہوجاتی ہیں لیکن ہر شعبے نے ملک کی خدمت کے لئے بہترین ذہنیت کے حامل لوگوں کے ذریعے ملک وقوم کی خدمت کرنی ہے اور زمانے کے ساتھ قدم سے قدم ملاکرچلنا ہے جس کے لئے جدید اصلاحات اوراقدامات اٹھانا ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ دعوٰی نہیں کرتاکہ اس مختصر مدت میں ختم کردوں گاتاہم یہ عزم ضرورت رکھتے ہیں کہ پاکستان پوسٹ کومنافع بخش ادارے کی طرف لے جائیں گے اور ماضی قریب کی طرح ڈاکخانے بند کرکے ڈائون سائزنگ نہیں کریں گے بلکہ پاکستان پوسٹ کو اپنے قدموں پر کھڑا کرنے کے لئے اسے وسعت دیں گے۔ نئے ڈاکخانے بھی کھلیں گےاور نئے عزم اور ولولے کے حامل کے لوگوںکو آگے لائیں گے۔ 6 کروڑکی بجائے 22 کروڑ صارفین کی ضروریات کو پورا کرنے کے قابل ہو گا۔انہوں نے کہاکہ سیونگ اکائونٹس بھی ختم نہیں ہوگا۔ہم سیونگ بینک کی طرف سے بھی جائیں گے اور پنشنرزکو پنشن بھی اداکریں گے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ ہم نے پاکستان پوسٹ کو ترقی کی طرف لے جانے کے لئے قلیل اور طویل المدت پالیسیاں مرتب کی ہیں جس پرگامزن ہو کر ہم اس ادارے کو منافع بخش بناسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزارت مواصلات پورے ملک میں سیلاب زدگان کی مدد کے لئے پیش پیش ہے۔ این ڈی ایم اے اور دیگراداروں کےساتھ مل کر پانی خدمات پیش کررہی ہے۔مولانا اسد محمود نے کہا کہ مملکت خداداد کی آج جو صورتحال ہے لوگ سوال کر کے پوچھتے ہیں کہ 75 سال کے بعدہم کس مقام پرکھڑے ہیں لیکن کسی کے پاس اس کا جواب نہیں ہے۔ ہم شہریوں کو وہ حقوق نہیں دے سکے جوانہیں ملنا چاہیے تھے۔ ہماری تیسری نسل اس ملک میں جوان ہو رہی ہے لیکن اب وقت آگیاہے کہ ہمیں مل کر ملک و قوم کی خدمات کے لئے کردار اداکرنا ہے کیونکہ یہ ملک نظریاتی ملک ہے اوراس کی اساس اسلامی نظریات پر رکھی گئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ جو ملک نظریات پر بنتے ہیں اس کے دشمن بھی ہوتے ہیں اور آج بھی پاکستان مخالف لوگ طاقتور کے طور پر ابھرتانہیں دیکھنا چاہتا۔ دشمن کبھی نہیں چاہتا کہ پاکستان ترقی کرےاور وہ چالیں چلتاہے لیکن ہم نے رکنا نہیں۔ بلکہ اپنی چال چلنی ہے اور معیشت کو مضبوط کرنا ہےاور اسی کی بنیاد پر دنیا میں پاکستان کاپرچم سر بلند کرناہے۔انہوں نے کہاکہ فتنہ گرسازش کرتےہیں لیکن ہم نے سازش کو ناکام بناناہے۔ قوم کو اعتماد میں لے کر آگے بڑھتے ہوئے اداروں کو ترقی کی راہ پر ڈالنا ہے۔پاکستان پوسٹ بھی اپنے صارفین کا اعتماد بحال کرے گا۔ ہم نے آئندہ نسلوں کو ابھرتاہواپاکستان منتقل کرناہے جس کے لئے ہم سب کو جدوجہد کرناہوگی۔ قبل ازیں وفاقی سیکریٹری مواصلات کیپٹن (ر) خرم آغانے کہاکہ پاکستان پوسٹ جدید ٹیکنالوجی سے ہم آہنگ ہو کے ملک و قوم کی ترقی میں کلیدی کر دار ادا کر سکتا ہے ۔ڈائریکٹر جنرل پاکستان پوسٹ نے کہاکہ راناحسن اختر نے کہا کہ پاکستان پوسٹ اس سے پہلے بھی یوم آزادی پاکستان کی سلور جوبلی 1972ء اور گولڈن جوبلی 1997ء کے موقع پر یادگاری ڈاک ٹکٹوں کا اجراء کر چکا ہے ۔ یادگاری ٹکٹوں کی چھپائی کا عمل نیشنل سیکورٹی پر نٹنگ پریس نے انجام دیا۔ 14 اگست2022ء سے یہ یادگاری ٹکٹ ملک بھر کے اہم ڈاکخانوں میں فروخت کے لیے دستیاب ہوں گے۔

Spread the love