پاکستان نے افغانستان کے عوام کیلئے سات ٹرک امدادی سامان افغان حکام کے حوالے کر دیا

اسلام آباد:پاکستان نے افغانستان کے عوام کے لئے سات ٹرک امدادی سامان افغان حکام کے حوالے کر دیا ، یہ امداد افغانستان کی عوام کے لئے انسانی امداد کے طور پر بدھ کو قومی سلامتی کے مشیر ڈاکٹر معید یوسف نے طورخم بارڈر پر افغان حکام کے حوالے کی۔اس موقع پر افغانستان کے لئے پاکستان کے خصوصی نمائندے محمد صادق بھی موجود تھے ۔ افغانستان کی جانب سے ڈپٹی وزیر برائے منیجمنٹ قاری عنایت اللہ‘ پاکستان افغان سرحد کے کوآرڈینٹرقاری ثابت ، ڈپٹی کمشنر طورخم قاری نذیر نے یہ امداد وصول کی ۔پاکستان تسلسل کے ساتھ دنیا پر زور دے رہاہے کہ وہ خوراک ، ادویات اور چھت کی فوری ضرورت پوری کرنے کے لئے فوری اقدامات اٹھائے تاکہ افغانستان میں تسلیم شدہ حکومت کی غیر موجودگی میں افغان عوام کو جن بدترین مشکلات کا سامنا ہے ان سے نکل سکیں ۔ وزیراعظم عمران خان پہلے ہی افغان عوام کے لئے پانچ ارب روپے کے پیکج کا اعلان کر چکے ہیں جبکہ پچاس ہزار میٹرک ٹن گندم بھی اس میں شامل ہے۔پاکستان نے خیر سگالی کے جذبہ کے تحت بھارت سے افغانستان کو گندم کی نقل و حمل کی بھی اجازت دی ہے۔قومی سلامتی کے مشیر ڈاکٹر معید یوسف نے دورہ طورخم کے حوالے سے اپنے ٹویٹ میں کہا ہے کہ اس ہفتہ کے آغاز میںوزیراعظم عمران خان نے افغان رابطہ سیل کی ایپکس کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کمیٹی کو ہدایت کی کہ وہ سرحد کا دورہ کر کے تجارت اور رابطوں میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کے لئے اقدامات اٹھائیں ۔انہوں نے کہاکہ طورخم وسط ایشیائی ریاستوں روس اور ایروایشیا کو گرم پانیوںتک رسائی میں مدد کے لئے مستقبل کا گیٹ وے ہے ۔ انہوں نے کہاکہ جیو اکنامکس ایک حقیقت تھی اور پاکستان کی حکومت کی کوششوں نے اس تصور کو حقیقت کا روپ دیا جس کا مثبت اثر ہر پاکستانی پر آنے والے سالوں میں پڑے گا ۔ انہوں نے ازبک ہم منصب کے ساتھ طور خم کے دورے کا حوالہ دیا جس میں مشیر تجارت رزاق دائود بھی ان کے ہمراہ تھے جہاں ازبک یارن کی پہلی کھیپ سرحد پر وصول کی ۔انہوں نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم کثیر الطرفہ اور دوطرفہ معاہدے کریں ۔طورخم کے حوالے سے انہوں نے کہاکہ برطانیہ ، امریکہ اور عرب دنیا سے افریقہ تک کے لیڈروں نے خیبر رائفلز ، طورخم کا دورہ کیا ہے ، خیبر رائفلز میس میں پیکچر گیلری اس کی عالمی سٹرٹیجک اہمیت کاپتہ دیتی ہے ۔خوراک کی فراہمی کے علاوہ پاکستان افغانستان کوآپریشن فورم کے زیراہتمام خوست اور کابل میں فری آئی کیمپ لگائے گئے جہاں پر پہلے دو روز آنکھوں کے آپریشن کئے گئے ہیں۔ افغانستان کو امداد کی فراہمی کے علاوہ پاکستان افغانستان کوآپریشن فورم نے ہزاروں ٹن اشیا خورد ونوش کے مختلف آئٹمز افغانستان کے عوام کے لئے بھجوائے ہیں ۔ 9ستمبر سے 16اکتوبر تک پاکستان نے خوراک ، ضروری ادویات ، خیموں اور کمبلوں پر مشتمل 84ٹرک اور 4سی ون تھرٹی جہاز امداد کے بھجوائے۔

Spread the love