وزیرستان میں سیکیورٹی فورسز کی کارروائی، مزید 2 خطرناک دہشتگرد ہلاک، 48 گھنٹوں میں ہلاک دہشتگردوں کی تعداد12

سیکیورٹی فورسز نے قبائلی اضلاع وزیرستان میں مزید دو دہشتگردوں کو ہلاک کردیا۔سیکیورٹی فورسز نے وزیرستان میں مختلف آپریشن کیا۔ شدید فائرنگ کے تبادلے میں تحریک طالبان پاکستان سجنا گروپ کا کمانڈر مولوی محبوب عرف ملوی اور میر سلام عرف انس کو ہلاک کردیا۔سیکیورٹی فورسز کی کارروائیوں کے حوالے سے بتایا گیا کہ دہشت گرد کمانڈر مولوی محبوب اور میر سلام دونوں بیت اللہ محسود اور دیگر دہشت گردوں کے کمانڈروں کے قریبی معاون تھے۔آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ یہ دہشت گرد سیکیورٹی فورسز اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے چیک پوسٹ، فوجی قافلوں پر 2007 میں لدھہ کے علاقے میں حملوں میں ملوث تھے۔دہشت گردوں کے بارے میں بتایا گیا کہ ہلاک دہشت گرد جنوبی وزیرستان میں آئی ای ڈی حملوں اور دہشت گردی کی دیگر کارروائیوں میں ملوث تھے۔خیال رہے کہ گزشتہ روز قبائلی ضلع شمالی وزیرستان میں سیکیورٹی فورسز کے آپریشن کے دوران فائرنگ کے تبادلے میں کمانڈرز سمیت 10 دہشت گرد ہلاک ہوگئے تھے۔۔آئی ایس پی آر نے کہا کہ دہشت گرد کمانڈر عبدالآدم زیب سیکیورٹی فورسز پر بدستور 20 سے زائد دہشت گردی کے واقعات، قانون نافذ کرنے والے اداروں اور مقامی افراد کے خلاف 2014 سے آئی ای ڈی، فائرنگ، سرکاری عمارتوں پر حملے، ٹارگٹ کلنگ، اغوا برائے تاوان، بھتہ اور دہشت گردوں کی تربیت اور منظم کرنے میں ملوث رہا ہے۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ سیکیورٹی فورسز نے دہشت گردوں کی موجودگی کی خفیہ اطلاعات پر شمالی وزیرستان کے علاقوں بویا اور دوسلی میں دو الگ الگ آپریشنز کیے جہاں آپریشن کے دوران فائرنگ کے تبادلے میں 3 کمانڈروں سمیت10 دہشت گرد ہلاک ہوگئے۔ہلاک ہونے والے دہشت گرد کمانڈر عبدالانیر عرف عادل کا تعلق کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کے طوفان گروپ، کمانڈر جنید عرف جامد کا تعلق ٹی ٹی پی طارق گروپ اور خالق شادین عرف ریحان کا تعلق ٹی ٹی پی صادق نور گروپ سے تھا۔

شیئر کریں