پاکستان کو مطلوب انتہائی خطرناک دہشتگرد منگل باغ افغانستان میں ہلاک

ننگرہار: پاکستان کو مطلوب کالعدم تنظیم لشکر اسلام کا سربراہ منگل باغ آفریدی افغانستان میں بم دھماکے میں ہلاک ہو گیا ہے ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق افغانستان کے صوبے ننگرہار میں بارودی سرنگ کے دھماکے میں منگل باغ اور اس کے تین ساتھی مارے گئے ہیں۔اس حوالے سے بتایا گیا ہے کہ افغانی صوبہ ننگرہار کے گورنر ضیاء الحق امرخیل نے منگل باغ کی ہلاکت کی تصدیق کر دی ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں ننگرہار کے گورنر نے تصدیق کی کہ لشکر اسلام کا سربراہ سرنگ بم دھماکے میں ہلاک ہو گیا ہے ۔واضح رہے کہ کمانڈر منگل باغ آفریدی اس کا گروپ کالعدم تحریک طالبان ( ٹی ٹی پی) پاکستان سے وابستہ رہا ہے ۔اس سے قبل بھی منگل باغ کی ہلاکت کی اطلاعات سامنے آئی تھیں۔حکومت پاکستان نے کالعدم تنظیم لشکر اسلام کے سربراہ منگل باغ اور ان کے چار ساتھیوں کو زندہ یا مردہ پکڑنے میں معاونت پر لاکھوں روپے کے انعامات کا اعلان کیا تھا۔حکومت نے منگل باغ کی سر کی قیمت پچاس لاکھ روپے مقرر کی تھی جب کہ ان کے دیگر تین ساتھیوں سیفور قبیلہ سپاہ ، عدنان قبیلہ بر قمبرخیل اور واحد قبیلہ شلوبرقمبر خیل کو پکڑنے میں معاونت کرنے پر بیس بیس لاکھ روپے کا انعام مقرر کیا تھا۔بتایا گیا ہے کہ ننگر ہار صوبے میں منگل باغ آفریدی اور اس کے ساتھی کافی عرصے سے روپوش تھے، یہ لوگ پاکستان میں کالعدم تحریک طالبان کے لیے بھی کام کرتے رہے تھے ۔ پاکستان حکومت کی جانب سے ان چاروں کی ہلاکت پر بھاری انعام کا بھی اعلان کیا گیا تھا ۔

شیئر کریں